فریش گریجویٹ اور نوکری کی پریشانی





ہم میں سے بہت سے لوگوں کے ساتھ ایسا ہوتا ہے کے ان کے پاس ڈگری تو ہوتی ہے لیکن پھر بھی نوکری نہیں ملتی۔

اس حالت میں انسان بہت پریشان ہو جاتا ہے۔ اور دماغی طور پر ڈیپریشن میں مبتلا ہو جاتا ہے۔

کیونکہ نوکری تلاش کرنے کہ باوجود بھی نوکری نہیں ملتی۔ 


 آپ لوگوں کو یہاں پر ایک حدیث یاد کروانا چاہتا ہوں۔

نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کی حدیث ہے کہ اگر تم اللہ تعالیٰ پر توکل کرو اس طرح جیسے چڑیا توکل کرتی ہے 
تو اللہ تمہیں اسی طریقے سے رزق عطا فرمائے گا جس طرح سے پرندوں کو عطا فرماتا ہے۔

یعنی جب پرندے اپنے گھر سے نکلتے ہیں تب ان کے پیٹ خالی ہوتے ہیں اور جب واپس گھر آتے ہیں تب انکہ پیٹ بھرے ہوتے ہیں۔ 


اس حدیث کا یہ مطلب ہرگز یہ نہیں ہے کہ آپ نوکری کے لیے محنت و مشقت کرنا چھوڑ دے اور گھر بیٹھے بغیر کسی محنت کے رزق عطا ہو جائے گا۔ 

پرندے اپنے رزق کو حاصل کرنے کے لیے پورا دن محنت اور حرکت کرتے ہیں جو آپ کو بھی کرنی ہوگی۔


 ایک اور حدیث
نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا  جب ایک بچہ ابھی اپنی ماں کے پیٹ میں ہوتا ہے۔ اللہ تعالیٰ تب ہی اس کا رزق لکھ دیتا ہے کہ اس بچہ کو دنیا میں کتنا رزق ملے گا۔

ایک اور حدیث میں فرمایا
 کہ تمہارا رزق تمہاری موت سے زیادہ تمہارا پیچھا کریں گا۔

آپ تب تک مر ہی نہیں سکتے جب تک آپ کے حصے کا رزق آپ کو نہیں مل جاتا۔ اس لیے نوکری نہ ہونے کی صورت میں پریشان بلکل بھی نہیں ہونا۔ 


ہمارے معاشرے کا مسئلہ صرف یہ ہے کہ ہم نوکری کی ہی تلاش میں رہتے ہیں
آگر نوکری مل گئی تب تو ٹھیک ہے ورنہ ہاتھ میں ہاتھ رکھ کر نہیں بیٹھ سکتے۔


دنیا بھر میں ایسے بہت سے افراد ہے جو نوکری نہیں ملنے کی صورت میں اپنے خود کے کاروبار کی شروعات کرتے ہیں۔
  میں آپ سے بھی یہی کہو گا کہ اگر نوکری نہیں ہے تو اپنے کاروبار کی شروعات کی جیئے آپ کا رزق آپ کو مل کر رہے گا۔

 اپنے پیشن کو اپنا پروفیشن بنائے۔ جس چیز کا بھی آپ کو شوق ہے اس کام کی طرف اپنا قدم ضرور آگے بڑھائیں۔ اپنے کاروبار کی شروعات کریں۔ 


اللہ تعالیٰ جس کو  بھی چاہتا ہے بغیر کسی حساب کے رزق عطا فرماتا ہے




0 Comments: