آخر کس وجہ سے بچے جھوٹ بولنا سیکھتے ہیں؟


ہم سب کو یہ بات معلوم ہے کہ آج کل کے بچے ہر بات پر جھوٹ بولنا سیکھتے جارہے ہیں۔
اور یہ سب جھوٹ یا تو بچے والدین کی ڈانٹ سے بچنے کے لئے بولتے ہیں یا پھر والدین سے کوئی کام کروانے کے لئے۔

اس کے علاوہ جیسے ہی بچے سکول جانا شروع کرتے ہیں۔ تب ان کے جھوٹ بولنے کی تعداد میں مزید اضافہ ہوجاتا ہے۔

اگر بچوں کو شروع سے ہی جھوٹ بولنے پر منع نہ کیا جائے تو بعد میں یہ بات آپ کے لیے کافی زیادہ پریشانی کا باعث بن سکتی ہے۔ 

اگر ایک بچہ ہر بات پر جھوٹ بولنا شروع کر دیے تب یہ اس کی عادت بن جاتی ہے۔ اور والدین کے لیے پریشانی۔
والدین کو اس بات کا خیال رکھنا چاہیے کہ جب بچہ بولنا شروع کرتا ہے تبھی سے بچے کو جھوٹ بولنے پر منع کیا جائے اور سچ بولنے کی ترکیب دی جائے۔

اس کے علاوہ کچھ ایسے طریقے ہیں جن کی مدد سے بچوں کی اس عادت کو کم کیا جا سکتا ہے۔

نمبر ون:
اس بات کا خیال رکھیں کہ بچے سے کوئی ایسی بات نہ پوچھی جائے جس پر اسے جھوٹ بولنا پڑے۔
مثال کے طور اگر بچے سے کوئی چیز ٹوٹ جاتی ہے تو اس سے یہ مت پوچھا جائے کہ یہ کس طرح ٹوٹٹی ہے۔ اور نہ ہی کم عمری میں بچوں پر غصہ کیا جائے۔ یہ سب وہ مین وجہ ہے جن پر بچے سب سے زیادہ جھوٹ بولتا ہے-

نمبر ٹو:
اگر بچہ پہلی بار جھوٹ بولتا ہے۔ تب بچے کو سمجھانا بھی ضروری ہے۔ اور ہر بار بچوں کے جھوٹ کو نظرانداز کرنا بھی غلط ۔ 
بچے کو اچھے طریقے سے سمجھایا جائے کہ جھوٹ بولنے کا کیا نقصان ہے اور سچ بولنے کا کیا فائدہ ہے۔ 
ان سب کے علاوہ آج کل والدین کی یہ صورت حال کہ بچوں کو کچھ اور کہتے ہیں اور خود کچھ اور کرتے ہیں۔

ایک بات یاد رکھیں بچوں کو سمجھانے کی بجائے ان کو عمل کر کے دیکھانا چاہیے۔

0 Comments: