ہمارے معاشرے میں کچھ عجیب خامیاں ہیں۔ جو رسک لینے سے روکتی ہیں۔



ہمارے معاشرے میں کچھ عجیب خامیاں ہیں۔ جو رسک لینے سے روکتی ہیں۔
ہمارے معاشرے میں کچھ عجیب خامیاں ہیں۔  جو ہمیں رسک لینے سے روکتی ہیں۔ کچھ بڑا کرنے سے روکتی ہیں۔

 ان سب کی شروعات کب ہوتی ہے۔ ان کی شورعات ہوتی ہے۔ اپنے گھر والوں سے۔ جب ہم کچھ سمجھنے لگتے۔ اپنے لیے کچھ کرنے لگتے ہیں۔ پھر دوست رشتہ دار سب ہمیں کسی نہ کیسی طریقے سے روکتے ہیں۔ تم اس کام کو نہیں کرسکتے۔ یہ بہت مشکل ہیں۔ صرف قسمت والے لوگ کامیاب ہوتے ہیں۔  

یہ سب لوگ ہمیں روکنے کے لیے اسی طرح کی سونی سنائی باتیں کرتے ہیں۔ اور یہ باتیں وہ لوگ کرتے ہیں۔ جنوں نے خود کی زندگی میں کبھی کچھ  نہیں کیا۔

یہ سب جعلی باتیں ہیں۔ اس معاشرے میں آپ کو ایسے بہت سے لوگوں ملے گے جو ایسی باتیں کر کے دوسروں کے سپنے ٹورتے ہیں۔
 ایک کامیاب زندگی وہ ہے جو آپ خود بناتے ہو۔ آپ جو کچھ کرسکتے ہو۔ وہ آپ کی اپنی سوچ ہے۔ جو باقی سب لوگوں سے الگ ہے۔ کیوں کہ سب لوگوں کی زندگی ایک جیسی نہیں ہوتی۔ دماغ ایک جیسا نہیں ہوتا۔ سب ایک دوسرے سے بلکل مختلف ہیں۔
یہ سب باتیں جو میں آپ کو بتارہا ہو۔ یہ سب میں نے بھی سونی ہیں۔ اور مان گیا تھا۔ میں یہ بات ماں گیا تھا۔ کہ میں اس قابل نہیں ہو۔ اس لائق نہیں ہو کہ کچھ کرسکوں۔ لیکن جب میں نے وہ سب کیا جو مجھے کرنے سے روکتے تھے۔ تب مجھے پتا چلا۔ کہ ان لوگوں کی باتیں جعلی تھی۔

ہمارے ساتھ جو سب سے بڑا مسلہ ہے۔ وہ کیا ہے۔ کہ ہم ان لوگوں کی باتوں میں آجاتے ہیں۔ وہ ہے کانفیڈینس۔ جب ہم بچپن سے گھر والوں کی اور اپنے قریبی لوگوں کی جعلی باتیں سنتے رہتے ہیں۔ اس وقت سے ابھی تک یہ جعلی باتیں ہمارا کانفیدینس اتنا کم کردیتی ہیں۔ کہ ہمارا دماغ ان کی باتوں کو مان جاتا ہے۔ ہم خود کو ان لکی مان لیتے ہیں۔

ان سے بچے کے لیے ایک چیز ہے۔ جو آپ کر سکتے ہو۔ کہ خود کے ائیڈیاز کو کبھی کسی کم مت سمجھوں۔  خود کو کبھی کسی سے چھوٹا مت سمجھو۔ خود سے ایک مضبوط ارادہ کرو۔ کہ کچھ بڑا کرنے میں۔ کچھ بڑا سوچنے میں۔ کوئی غلط بات نہیں۔
 لیکن کچھ بڑا نہ سوچنا یہ غلط ہے۔ بغیر کوشیش ہار مان جانا یہ غلط ہے۔

اگر ایک بار ٹرائی کرنے سے آپ وہ نہیں کر پاتے جو آپ چاہتے تھے۔ تب بھی روکے مت ہار مت مانے۔ میرے ساتھ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ آپ کے ساتھ ------ ہم سب کے ساتھ ایسا ہوتا ہے۔ میں نے اپنے اپنی لاسٹ ویڈیوں میں بھی بتایاں تھا۔ کہ میری شروع کی ویڈیوز جب میں نے بنائی تو میں ٹیک سے لکھ نہیں سکتا تھا۔ بول نہیں سکتا تھا۔۔۔۔۔۔ یہ پریکٹس ہے۔ جو آپ کو کامیاب بناتی ہے۔

میں آپ کو موٹی ویٹ کرنے کے لیے ایک مثال دیتا ہوں۔ ایک تیر نشانے پر لگانے کے لیے اس کو  پوری طاقت سے پیچھے کھینچا جاتا ہے۔ اس کا مطلب یہ ہے کہ اگر آپ پر بھی کوئی ایسا وقت آتا ہے۔
لوگ آپ کو جتنا پیچھے کھینچنے کی کوشیش کرے گے۔ تو سمجھ جانا اب کیسی منزل پر پوہنچنے والے ہو۔


0 Comments:

آپ انٹرنیٹ کو اپنا کاروبار بناؤں



آپ انٹرنیٹ کو اپنا کاروبار بناسکتے ہیں
اس ویڈوں سے آپ کی پوری زندگی بدل سکتی ہے۔ میں اس میں ایک ایسا راستہ بتاوں گا جس سے آپ کی زندگی ویسی بن سکتی ہے۔ جیسی آپ چاہتے ہیں۔
میں آپ کو اس ویڈیوں کا ٹاپک پہلے ہی بتا دیتا ہو۔ وہ یہ ہے. کہ انٹرنیٹ پر پیسے کمانے کا بہترین طریقہ کون سا ہے۔ جس کو آپ اپنا کیرئیر بھی بناسکتے ہیں۔ میں آپ کو اپنا پرسنل ایکسپیریئنس بتاوں گا. جو پہلے کیسی ویڈیوں میں نہیں بتایا۔
اگر واقعے آپ انٹرنیٹ سے پیسے کمانا چاہیتے ہیں۔ تو ایک بات سمجھ لے۔
اس کا سب سے بہترین طریقہ ہے۔ یوٹیوب اور بلاگ۔ یہ میں ان لوگوں کے لیے بتارہاں ہو۔ جو جانتے ہیں۔ کہ جتنی بھی پڑھائی کر لے۔ وہ ان کے کیسی کام نہیں آئے گی۔ اور جو انٹرنیت پر اپنا کریئر بنا چاہتے ہیں۔ 
تو یہ ویڈیو ان لوگوں کے لیے ہے۔ جن کے پاس کوئی ٹیکنیکل سکیلز نہیں ہیں۔  کہ وہ اس دنیا میں کیسے اپنے آپ کو سروائیو کریں۔

میں نے پیسے کمانے کے لیے ایسی ایسی مشکل فیس کی ہیں۔ کہ جب میں سوچتا ہو۔ تو پریشان ہوجاتا ہو۔ کہ کس طریقے سے پیسے کماؤں۔ جس کام میں مزا بھی آئے۔ اور کبھی بور بھی نہیں ہوں۔ اگر آپ کی بھی ایسی ہی سوچ ہے۔ کہ صرف  انٹرنیٹ سے پیسے کمانا چاہتے ہیں اور آپ کے پاس کوئی ٹیکنیکل سکیلز نہیں ہے۔ تو یوٹیوب اور بلاگ کے سوا کوئی دوسری آپشن کی طرف نہ جائے۔

یہ بات میں اپنے ایکسپیرینس  سے بتا رہا ہو۔ اگر آپ کی عمر 18 سے 22 کے درمیان ہے۔ تو یہ بیسٹ ایج ہے۔ جس میں آپ کے پاس بہت اچھا وقت ہے۔

اگر کچھ اپنا کرنا چاہتے ہیں۔ تو اس سے اچھا ٹائیم آپ کو نہیں ملے گا۔

میرے اندر ایسی بہت سی خامیاں ہے۔ جو آج سے پہلے میں نے کیسی کو نہیں بتائی۔ میرا پڑھائی کرنے میں زرہ بھی دل نہیں کرتا تھا۔ جس کی وجہ سے میں بہت پریشان رہتا تھا۔ مجھے اس بات کی ٹینشن رہتی تھی کہ اچھی ڈگری نہیں ہوگی تو مجھے جاب کون دے گا۔ میں کیسے اپنی ضرورتیں پوری کروں گا۔ لیکن میں نے خود کو سمجھایا۔ کہ جو میں کرنے والا ہو- اس کے لیے مجھے کوئی ڈگری کی ضرورت نہیں۔

جب میں نے یوٹیوب چینل شروع کیا تھا۔ میں بہت زیادہ سٹریس میں تھا۔ کیونکہ میں صرف  انٹرنیٹ سے پیسے کمانا چاہتا تھا۔  لیکن مجھے کچھ سمجھ نہیں آرہا تھا۔ کہ یہ سب کیسے کرو۔ کوئی بتانے والا نہیں تھا۔ انٹرنیٹ پر ہر دو نمبر طریقہ آزما کے دیکھا۔ لیکن کچھ حاصل نہیں ہوا۔ لیکن جیسے جیسے محنت کی تو مجھے اس بات کا پتا چلا۔ کہ میں نے کس چیز کو اپنا کیرئیر بنا ہے۔ 

مجھے صرف ایک چیز کا افسوس ہے۔ کہ میں نے یہ کام بہت لیٹ سٹارٹ کیا۔ لیکن یہ افسوس صرف کچھ وقت کے لیے رہے گا۔ تو اگر آپ انٹرنیٹ پر اپنا کرئیر بنا چاہتے ہیں۔ تو اس میں دیر نہ کریں۔ جس کام میں آپ کو مزا آتا ہے۔ بس اسے شروع کردے۔ اور شروع میں آپ کو تھوری محنت کرنی ہوگی۔

میں آپ کو موٹیویشن کے لیے بتادوں کہ میں نے شروع میں جو ویڈیوز بنائی تھی۔ ان پر مجھے کوئی اچھا ریسپونس نہیں ملا۔ لیکن میں نے ان سب سے بہت کچھ سیکھا۔ میں نے سیکھا۔ کہ مجھے لوگوں سے کیسے بات کرنی ہے۔ اب میں کسی بھی ٹاپک پر آسانی سے بات کرسکتا ہو۔ آسانی سے سمجھا سکتا ہو۔ میں نے سیکھا ہے کہ لوگوں کی ہیلپ کیسے کرنی ہے۔ میرے لیے یہ چینل سب کچھ ہے۔ کیونکہ کے میرا مقصد ہے۔ خود کو موٹیویٹ کرنا، آپ کو موٹیویٹ کرنا۔ یہ میرے لیے بہت بڑی لرنینگ ہے۔ 

اس کریئر میں آپ جتنی محنت کرے گے۔ انتا اچھا آپ کو ریسپونس ملےگا۔ بس آپ اپنی کوشیش کرتے رہو۔ اگر آپ میری پہلی ویڈوں دیکھیں تو آپ کو پتا چلے گا۔ کہ میں نے کہا سے شروعات کی۔

جن لوگوں نے میری پہلی ویڈیوز دیکھی ہیں۔ ان سب سے اچھا ریسپونس نہیں ملا جس کے بعد کوئی ویڈیو بنا میرے لیے آسان نہیں تھا- لیکن ان لوگوں کی طرح جنوں نے کبھی ہار نہیں مانی۔ میں بھی ویسے ہی ہار نہیں مانوں گا۔ اور اپنے ساتھ آپ سب کی مدد کروں گا- جو میرے جیسی سوچ رکھتے ہیں۔ تو جو لوگ اس طرح کی مزید ویڈیو دیکھنا چاہتے۔ اپنی زندگی میں کچھ کرنا چاہتے ہیں۔ تو اس چینل کو سبسکرائیب کریں۔ اور ساتھ بل آئیکون پر بھی کلک کریں تاکہ نیو ویڈیوں آنے پر آپ کو اس کا نوٹیفیکیشن مل جائے۔ مزید پڑھیں

0 Comments:

جو شخص نکامی کا مقابلہ نہیں کر سکتا- وہ کبھی کامیابی نہیں پا سکتا

جو شخص نکامی کا مقابلہ نہیں کر سکتا- وہ کبھی کامیابی نہیں پا سکتا۔



اچھے دوست بڑے وقت کو بھی اچھا بنادیتے ہیں۔


کوئی تب تک نہیں جیت سکتا جب تک وہ اپنے ڈر کو نہ ہرا لے۔



اگر آپ سے کوئی کہتا ہے کہ تم یہ نہیں کرسکتے۔ تو وہ اپنے سوچنے کی حد بتاتا ہے۔ آپ کے نہیں۔ آپ خود پر بھروسہ رکھے۔


اس وقت کام کرو۔ جب لوگ سوتے ہیں۔
اس وقت کچھ نیا سیکھوں۔ جب لوگ کھیلتے ہیں۔
اس طرح زندگی جینا سیکھوں جیسے لوگ سوچتے ہیں۔



اگر آپ پریشانی کا مقابلہ نہیں کرسکتے۔ تو کامیابی حاصل نہیں کرپائیں گے


اگر آپ آپنی زندگی بدلنا چاہتے ہیں۔ تو اسے بدلنے کی کوشیش کریں۔ یا بھر اپنی اس سوچ کو۔




اگر آپ سوچتے ہو کہ کوئی برا کام کرسکتے ہو۔ تو آپ ادھا کام کر چکے ہو۔



خود پر اعتماد کرنا سیکھیں۔ کبھی دوکھا نہیں کھائیں گے۔



اگر آپ ایک چیز کو کرنے میں بہت زیادہ وقت لگاتے ہیں۔ تو آپ اسے کبھی پورا نہیں کر پاؤں گے۔



آگر آپ کو خود پر یقین ہے۔ تو آپ کو کوئی نہیں روک سکتاتا۔

1 Comments:

کامیابی آپ کے اندر ہے



جب ہم اپنے لیے کچھ کرنے کی کوشیش کرتے ہیں۔ کچھ برا کرنے کی سوچتے ہیں۔ تو کچھ لوگ ہمیں روکنے کی کوشیش کرتے ہیں۔ ان میں گھر والے بھی شامل ہوتے ہیں اور دوست بھی۔ یہ لوگ ہمیں ڈراتے ہیں۔ روکتے ہیں۔ اور ہمارے ارادے توڑنے کی پوری کوشیش کرتے ہیں۔ اور زیادہ تر یہ لوگ اس کوشیش میں کامیاب ہوجاتے۔
ہم میں سے زیادہ تر لوگ کیوں ان کی باتوں میں آجاتے ہیں۔ یہ میں بتانے والا ہو۔ اس ویڈیوں میں-

جو بات میں بتانے والا ہوں۔ اصل وجہ اس کے پیچھے ہے۔ اصل میں جو چیز  ہمیں کچھ برا کرنے سے روکتی، آگے برنے سے روکتی ہے۔ وہ چیز ہمارے اندر ہے۔
یہ جو ہمارے اند کا ڈر ہے۔ جو ہمارے اندر کام چھورنے کی عادت ہے۔ یہ ہمیں روکتی ہے۔

اب جو بات میں بتانے والا ہوں۔ اس کو سمجھ نے کی کوشیش کریں۔ جو لوگ ہمیں روکتے ہیں۔ گھر والے بھی اور دوست بھی۔ اگر آپ ان لوگوں کو جواب دینا جاہتے ہو۔ تو آپ کو کیا کرنا ہے۔
پہلے خود کے ارادے مضبوظ کرنے ہیں۔ کوئی کچھ بھی کہے۔ کہ آپ یہ نہیں کرسکتے جتنی مرضی وجہ آپ کو بتائیں۔ کہ پیسے کی وجہ سے نہیں کرسکتے۔ یہ سب اکیلے نہیں کرسکتے۔ جو کچھ مرضی کہے۔اگر آپ اپنے اندد کلیر ہیں۔ آپ کو صاف نظر آہا ہیں کہ آپ کیسی طریقے سے وہ سب کرسکتے ہو۔ جو آپ چاہتے ہو۔ توپھر آپ کو کیا کرنا ہے۔ یہاں آپ کو وہی کرنا ہے۔ جو آپ چاہتے ہیں۔ جس میں آپ کو سوفیصد یقین ہے۔ کہ میں کسی طریقے سے یہ سب کر سکتے ہو۔ 

آپ کو خود سے کہنا ہے۔ کوئی بھی پریشانی آئے۔ ان سب کا سامنا کروں گا۔ نکامیوں کا سامنا کروں گا۔ لیکن چھوڑو گا نہیں۔ اگر آپ یہ کرگے۔ جو میں کہہ رہا ہو۔ تو پھر آپ کو کوئی نہیں روک سکتا۔ جس دن آپ نکامی کا سامنا کر گے۔ کہ جس راستے سے ایک بار نکام ہوئے تو کیا ہوا۔ اب اس طریقے سے نہیں بلکہ کوئی طریقے سے کروگا۔ تو جس دن آپ ایسا سوچنے لگ گیے۔ تب آپ انسٹوپ ایبل ہیں۔

چاہے لوگوں کو آپ نکام نظر آئے گے۔ لیکن حقیقت میں یہ آپ کی کامیابی کا حصہ ہیں۔  کیوں کہ نکامے ہونے کے راستے تو بہت ہیں۔ لیکن کامیابی کا صرف ایک۔

یہ نکامی ہی ہمیں سکھاتی ہے۔ کہ اب کونسا راستہ منزل کی طرف جاتا ہے۔

اگر آپ نواز و دین کی کو دیکھے۔ آپ کو پتا چلے گے۔ نکامی اور کامیابی میں کیا فرق ہے۔ جب اس نے اپنے گھر والوں کو بتایا کہ میں ایک ایکٹر بننا چاہتا ہو۔ ہیرو بننا چاہتا ہو۔ تو ان کے ساتھ بھی وہی ہوا۔ سب رشتے دارو نے، گھر والوں نے، دوستوں نے سب نے اس کا مزاق بنایا۔
لوگوں نے روکنے کی بہت کوشیش کی۔ کہ ہیروں والی شکل نہیں ہے۔ جسم نہیں ہے۔ کیسے ہیرو بنے گا۔ تمہیں کون فلموں میں لے گا۔ لیکن اس نے وہی کیا جووہ چایتا تھا۔ جو اسے پتا تھا کہ وہ کسی طریقے سے کرسکتا ہے۔

شروع میں آپ کو نواز و دین صدیقی کی طرح  ہر جگہ سے واپس مایوس لوٹنا پڑگے۔ وقت لگے گا۔ تب جاکر آپ اس جگہ پہنچوں گے۔ جہاں آپ چاہتے ہو۔
 تو آپ جو چاہتے ہو بس وہی کرتے رہو۔ کبھی افسوس نہیں ہوگا۔ 

جیسے میں وہ کر رہا ہو جو میں چاہتا ہو۔ چاہے سب کچھ ویسا نہیں ہوتا۔ جو میں سوچتا ہو۔ لیکن ان لوگوں کی طرح جنوں نے کبھی ہار نہیں مانی۔ میں بھی ویسے ہی ہار نہیں مانوں گا۔ اور اپنے ساتھ آپ سب کی مدد کروں گا جو میرے جیسی سوچ رکھتے ہیں۔ تو جو لوگ اس طرح کی مزید ویڈیو دیکھنا چاہتے۔ اپنی زندگی میں کچھ کرنا چاہتے ہیں۔ تو اس چینل کو سبسکرائیب کریں۔ اور ساتھ بل آئیکون پر بھی کلک کریں تاکہ نیو ویڈیوں آنے پر آپ کو اس کا نوٹیفیکیشن مل جائے۔

2 Comments:

اپنے ڈر سے مت دڑو۔ آیئں کچھ الگ سیکھیے





برا وقت، مشکل فیصلے،  عظیم قربانیاں اور مشکل میں صبر کرنا، یہ سب کامیابی زندگی کا حصہ ہیں۔

نکام ہونا، غلطیاں کرنا، اس سے کوئی فرق نہیں پڑتا۔ کہ آپ نے کتنی غلطیاں کی۔ کتنی بار نکام ہوئے۔ سب جیزیں ویسے نہیں ہوتی جیسے ہم چاہتے ہیں۔ اگر آپ گر جاتے ہیں تو دوبارہ اٹھے لیکن ہار مت مانے۔
جو لوگ کامیاب ہوتے ہیں وہ کیا کرتے ہیں؟ ان کی کامیابی کی سب سے بری وجہ ہی یہی ہے۔ کہ وہ خود پر یقین کرتے ہیں۔ ان کے ارادے مضبوظ ہوتے ہیں۔ لوگ ان کو بھی تانے دیتے ہیں، وہ سب کہتے ہیں جو آپ برداشت نہیں کرپاتے۔
لیکن اگر  آپ اندد سے مضبوط ہیں۔ تو یہ لوگ سوائے بولنے کے کچھ اور نہیں کرسکتے۔ تو اس وقت آپ خود  سے کہے کہ ایسا کب تک چلے گا کیا ہر مشکل پر پیچھے ہٹ جاؤں گے۔


اس سے کوئی فرق نہیں پرتا آپ کی زندگی میں کتنی مشکلات آتی ہیں۔ کتنے ارادے ٹوتے ہیں۔ اور اگر کوئی مشکل وقت آتا ہیں توخود سے کہو یہی وقت ہے مضبوطی سے مقابلہ کرنے کا، یہی وقت ہے ان کو آسان کرنے کا۔ اگر ایک راستے بند ہے تو کیا ہوا۔  منزل ایک ہے، راستے اور بھی ہیں۔

بس کبھی دل چھوٹا مت کروں۔ اگر کوئی چیز ہماری سوچ کے مطابق نہیں ہوتی تو ہم خود کو نکام سمجھتے ہیں لیکن اس بات کا ہرگز یہ مطلب نہیں ہے۔ اگرکوئی کام آپ کی سوچ کے مطابق نہیں ہوتا تا کیا ہوا۔ کم آز کم آپ نے کچھ کرنے کی کوشیش تو کی۔ آپ کا کوئی پلان تو ہے۔ کوئی ٹارگیٹ تو ہے۔ جیسے آپ حاصل کرنا چاہتے ہو۔ یہ کیسی کو پتا نہیں ہوتا کہ اپنے پلان کو کیسے پورا کریں۔ بس ایک بات کا پتا ہونا چاہیے کہ جو آپ سوچتے ہو اسے کیسی طریقے سے کر بھی سکتے ہو۔ 

بس شروعات کرو۔ آپ کو کچھ لوگ ضرور بولے گے۔ کہ تم نہیں کرسکتے لیکن یہ وہ لوگ ہیں۔ 
جو لوگ خود کو بھی نہیں جانتے۔ اپنے کیسی پلان کو نہیں جانتے،  اپنے ٹارگیٹ کو نہیں جانتے، یہ بھی نہیں جانتےکہ ان لوگوں نے زندگی میں کیا کرنا ہے۔ یہ لوگوں خود کچھ نہیں کرپاتے۔ سوائے دوسروں کو تانے دینے کہ۔ 

اگر آپ کی سوچ بھری ہے ارادے برے ہیں۔ تو ایسے لوگ آپ کو بھی تانے دے گے۔ آپ کے اندر ایک ڈر پیدا کرنے کی کوشیش کریں گے۔ یہ لوگ نہیں جانتے کہ آپ یہ کام کرسکتے ہو یا نہیں۔ بلکہ یہ بات آپ خود جاتنے ہو۔  کہ یہ کام آپ کے لیے کتنا آسان ہے۔ اور کب اسے پورا کرسکتے ہو۔ 
یہ وہ لوگ ہیں جو آپ کو  بتاتے ہیں کہ آپ صحی راستے پر ہو۔ اور آپ کی سوچ ان سے کتنی بہتر ہے۔ اب جو آپ کرنے والے اس کو  پورا کرنے کی پہلی شرط یہ ہے کہ کبھی روکوں مت۔ بس کوشیش کروں۔ یہ لوگ کبھی خاموش نہیں ہوگے۔ ایسے لوگوں کی باتوں برداشت کرنی ہوگی۔ یہ لوگ آپ کو ہر صورت میں تانے دے گے۔ جب آپ اپنے مقصد کو پالو گے۔ یہ تب بھی تانے دے گے۔
 آپ کے راستے میں نکامیاں بھی آئے  گی لیکن ان کو  تسلیم مت کرو، اور کبھی دل چھوٹا مت کرنا۔ نہ اپنا اور نہ دوسروں کا۔ اگر آپ انٹرنیٹ پر دیکھیں تو جتنے بھی کامیاب لوگ ہیں وہ سب ان حالات سے گزرے ہیں- ہر بار نکامی سے کچھ نا کچھ نیا سیکھتے ہیں۔ 
آپنے ڈر کا مقابلہ کرتے ہیں۔ بس وہ کبھی روکتے نہیں۔

1 Comments:

ہر انسان کے اندر ایک خاص چیز ہوتی ہے. جو اسے کامیاب بناتی ہے.



ایک کامیاب انسان بنے کے لیے، امیر بنے کے لیے، کچھ برا کرنے کے لیے۔ آپ کو صرف ایک چیز کی ضرورت ہے۔ اگر آپ کے اندر یہ چیز ہے۔ تو آپ یہ سب کرسکتے ہیں۔
اس چیز میں کامیاب بنے کے وہ سب طریقے ہیں۔ جن کی آپ کو ضرورت ہے۔ تو یہ چیز میں بتانے والا ہو اس ویڈیوں میں۔
ہم لوگ ہمیشہ خود سے بری بری باتیں کرتے ہیں۔
کبھی روکوں مت۔ کبھی ہمت مت ہارو۔
بس کوشیش کرتے رہو۔ آگے برھتے رہو۔ ایک دن کامیابی ضرور ملے گی۔
ہم یہ سب خود سے بول تو لیتے ہیں۔ لیکن کبھی ان پر عمل نہیں کرتے۔ تو یہ عمل کیسے کریں۔ اس کو حل کرنے کے لئے ایک یہی چیز ہے جو میں آپ کو بنانے والے۔ جو سب پریشانیاں حل کر دے گی۔ وہ ہے عادت۔
آپ کو ایک عادت بنانے کی ضرورت ہے۔ اس کے بغیر آپ کوئی ایک کام بھی زیادہ دیر نہیں کرسکتے۔
اگر آپ کو کوئی کام کرنے کی عادت ہے۔ تو پھر آپ کیسی چیز کی بھی فکر نہیں کرتے۔ آپ اس کام کے ریزلت کی بھی فکر نہیں کرتے اچھا ہے۔ لوگوں کیا کہتے آپ ان کی بھی فکر نہیں کرتے۔ کیونکہ آپ کو اس کی عادت ہے۔ چاہے کتنی بھی رکاوٹ آئیں آپ اس کام کو کیسی قیمت پر بھی کرنے کےلیے تیار رہتے ہیں۔
اگر آپ گیم کیھلتے ہیں تو یہ آپ کی عادت ہیں۔ مووی زیادہ دیکھتے ہیں تو یہ آپ کی عادت ہے۔ گانے  زیادہ سننتے ہیں تو یہ آپ کی عادت ہے۔  کیسی بھی طرح کا کچھ بھی ایسا کام جو آپ چھوڑ نہیں سکتے وہ آپ کی عادت ہے۔ جو آپ بغیر کیسی لالچ کے بھی کرو گے۔ آپ کو ان کے لیے نام، پیسہ، شہرت ایسی کوئی لالچ کی ضرورت نہیں ہوتی۔ یہ سب آپ  ان سب چیزوں کے لئے نہیں بلکہ آپ عادت پوری کرنے کے لیے کرتے ہو۔
اور اگر کسی بھی چیز کی عادت آپ کو پر جائے تو  آپ  وہ کام آپ چھوڑ نہیں سکتے۔
جب آپ سگرٹ پیتے ہیں تو آپ کو خوشی ملتی ہیں۔ سکون ملتا ہے۔ کیونکہ یہ آپ کی عادت بن چکی ہے۔
اسی طرح کوئی بھی شخص ہے۔ جس کو آپنے کام کی عادت ہے۔ چاہے وہ کوئی بھی ہو۔ جب وہ کام کرے گا۔ تو اسے اسی طرح اچھا لگے گا جیسے ایک سگریٹ پینے والے کو لگتا ہے۔
اگر آپ ان سے سگریٹ چھورنے کو کہے گے، کیا وہ چھورے گا۔ کبھی نہیں۔ وہ یہ کرنے کے ہزار بہانے بنائے گا، گھر چھوڑ دے گا۔ باقی رشتے ختم ہوتے ہیں تب بھی نہیں چھوڑے گا۔ یہاں تک کے اگر خود بھی چاہے تو بھی نہیں چھوڑ سکتا۔
اب اگر آپ سوچے کہ ایسی ہی عادت آپ کو کامیاب ہونے کے لیے لگ جائے، پھر آپ کو بھی اس انسان کی طرح کیسی بات کی کوئی فکر نہیں ہوگی جو نشہ کرنے کا عادی ہے۔ 
ایسی طرح اگر اپ پیسہ کمانے کی عادت بنالے۔ ایک کام کرنے کی عادت بنالے۔ اپنی انرجی کو صیح استعال کرنے کی عادت بنالے۔ خوش رہنے کی عادت بنالے۔
اس کے بعد آپ کو کامیابی سے کوئی نہیں روک سکتا۔ یہاں تک کہ آپ بھی نہیں۔ 
تو پھر کیوں نا ہم اپنی انرجی کو ایسی جگہ استعمال کریں کہ آنے والے وقت میں اس سے فائرہ حاصل ہو، اور یہ آپ تب ہی کر پاوں گے جب آپ کو کوئی لالچ نہیں ہوگا۔ یہ آپ کی عادت ہونی چاہیے۔ مزید پڑھیں

2 Comments: