جدوجہد سے کامیاب زندگی بنتی ہے محنت سے نہیں




کیسی چیز کو حاصل کرنے کے لیے  جدوجہد کتنی ضروری ہے۔
آخر  جدوجہد کیا ہے آپ جو کہتے ہیں کہ میں نے اتنے سال محنت کی۔ آگر آپ کو کوئی چیز پسند ہے۔ اور آپ نے دن میں کیئ گھینٹے اس پر کام کیا، تو یہ   جدوجہد نہیں ہے۔ آپ ایسے Hard work تو بول سکتے ہو ، لیکن یہ  جدوجہد نہیں ہے-
تو جدوجہد کیا ہیں،  اگر آپ کو کوئی کام اچھا لگتا ہے اور اسے آپ کرتے جا رہے ہو، اس میں آپ صرف محنت کر رہے ہیں،  آبھی تک اپ نے کوئی  جدوجہد نہیں کی-
آپ کی  جدوجہد کی شروات تب ہوتی ہے جب آپ کو یہ کام کرنے کے لیے لڑنا پرتا ہے۔ آپ کوئی کام کر ریے ہیں۔ کرتے جا رہے ہیں۔ کرتے جا رہے ہیں
تو یہ صرف محنت ہے۔ لیکن آب ایک وقت آتا ہے کہ آپ یہ کام کر نہیں سکتے۔ پھر آپ کام کرنے کے لیے لڑ رہے ہیں اور کام پورا کرنے کے لیے محنت کر رہیں۔ اب آپ کو کام کرنے کے لیے  جدوجہد کرنی پر رہی ہے۔ یہ  جدوجہد ہے۔
مثال کے طور پر
جب آپ کوئی Game کھیلتے ہو۔ تو آپ کو اس میں مزہ آتا ہے۔ ٹھیک اسی طرح سے جب آپ اپنی پسند کا کام کرتے ہو، تو یہ بھی آپ کے لیے ایک Game ہے۔ اس میں کوئی  جدوجہد نہیں ہو رہا ہے۔ تو پھر  جدوجہد کب ہو گ؟
جب آپ کے گھر والے بوری طرح سے۔۔۔۔۔۔۔۔۔ بوری طرح سے آپ کے سپنوں سے نفرت کررہے ہیں۔ کے آپ کو BSC ہی کرنی ہوگی۔ تو اس نفرت کے باوجود بھی آپ وہی کر رہے ہو جو آپ کا دل کہتا ہے۔تو یہ  جدوجہد ہے۔
آپ نہ MOVIES میں دیکھا ہو گا کہ جب کو HERO لڑ رہا ہوتا ہے۔ وہ تب تک بہت اسانی سے مقابلہ کرتا ہے جب تک اسے کچھ نہیں ہوتا۔ لیکن جب اسے کچھ زخم لگتے ہیں، ہاتھوں پر، پیروں پر، اور جسم پر۔ یہاں تک کہ وہ اب مقابلہ بھی نہیں کر سکتا۔
تو اصل میں یہ  جدوجہد  ہے۔ کہ اب وہ چل بھی نہیں سکتا۔ لیکن پھر بھی مقابلہ کر رہا ہے۔ ------چل بھی نہیں سکتا۔ پھر بھی مقابلہ کرنے کی کوشیش کررہا ہے۔
یہاں پر MARTIN LUTHAR نے کہا تھا۔
اگر تم اڑ نہیں سکتے تو بھاگوں۔
اگر تم بھاگ نہیں سکتے تو چلوں۔
اگر تم چل نہیں سکتے تو رینگتے ہوئے چلوں۔
تو آخر  جدوجہد کی Definition کیا ہے؟
آپ کسی کام کو کر رہے ہوں۔ جس میں آپ کو مزا آتا ہے۔ جو آپ کو پسند ہے۔ تو یہ آپ کا Passion ہے۔ اس میں آپ جتنی بھی محنت کریں۔ وہ صرف محنت ہے۔ STRUGGLE نہیں۔
آپ کی جدوجہد شروع ہوگی۔ لوگوں کے ھنسے سے۔
آپ کی جدوجہد شروع ہوگی۔ کم پیسوں میں بھی کام جاری رکھنے سے۔
آپ کی جدوجہد شروع ہوگی- لوگوں کے تانے سنے سے۔
آپ کی جدوجہد شروع ہوگی۔ جب جسم پوری طرح تھک چوکا ہے۔
تب بھی آپ نہیں رکتے۔ ایک بار اور محنت کرتے ہیں۔  جب آپ تھکنے کہ باوجود بھی نہیں روکتے تو تب آپ کی  جدوجہد شروع ہوگی۔ 

1 comment:

  1. This comment has been removed by a blog administrator.

    ReplyDelete