اگر آپ سپنے دیکھ سکتے ہیں.تو انھیں پورا بھی کر سکتے ہیں


اس دنیا میں ہر انسان سپنے دیکھتا ہیں۔ لیکن سب لوگوں کے سپنے پورے نہیں ہوتے۔ کبھی اپنی وجہ سے، کبھی گھر والوں کی وجہ سے اور کبھی اس دینا کی باتوں کی وجہ سے۔ 
کامیاب زندگی سے پہلے ہمیں لوگوں کی یہ سب باتیں پرداشت کرنی پڑتی ہیں۔  کہ ابھی تم بہت چھوٹے ہو۔ پہلے بڑے ہو جاؤں۔ اتنے بڑے کام نہیں کر سکتے۔ 
یہ دنیا کہ لوگ وہی کہیں گے جو ان کا کام ہے۔ آپ کو ہر چیز کے تانے ملے گے۔ آپ کی عمر اور زمہ داریوں کو آپ کی کمزوری بنائے گے۔ کچھ بھی بڑا کرنے سے آپ کو روکے گے۔
اس کی کیا وجہ ہے کہ ایک امیر شخص امیر بنتا جاتا ہے۔ اور غریب اور زیادہ غریب۔
اس کی کیا وجہ ہے کہ ایک انسان جس کے پاس اچھی ڈگری ہوتی ہے۔ امیر نہیں بن پاتا۔ اور جس کے پاس کوئی ڈگری نہیں ہوتی ہے پھر بھی امیر بن جاتا ہے۔

جو لوگ اپنی زندگی میں زیادہ کچھ حاصل نہیں کر پاتے۔ چاہے پیسہ ہو یا اچھی ڈگری۔ ایک ریسڑچ کے مطابق ایسے لوگ آپنے دماغ کو صحی استعمال نہیں کرتے۔
آگر آپ پیسے کمانا چاہتے ہیں تو آپ کے پاس کوئی ایسی چیز ہونی چاہیے، ایسا ٹیلنٹ ہونا چاہیے، ایسی سوچ ہونی چاہیے۔ جو پیسے کو آپ کو طرف کیھنچے۔
سب سے پہلے آپنے لیے کچھ وقت نکالے اور سوچے کہ آپ کے پاس ایسی کون سی چیز ہیں۔ جس کے کرنے سے آپ تھکتے نہیں۔ کبھی بور نہیں ہوتے۔

آپ یہ تو نہیں سوچ رہے کہ اس میں کون سی نیئ بات بتا رہا ہو۔ لیکن آپ یہ ویڈیوں مکمل دیکھے۔ اس سوال کا جواب آپ کو مل جائے گا۔ آپ کو کامیابی کا راستہ مل جائے گا۔ آپ کو پیسہ کمانے کا طریقہ مل جائے گا۔
کیونکہ یہ وہ راستہ ہے. جس سے میں خود بھی پیسے کما رہا ہو.
سب سے پہلے آپ اپنے ان کاموں کی لسٹ بناؤں، آپ ان کاموں کی لسٹ بناوں  جو کام آپ کو بہت زیادہ پسند ہیں، اور جس کام سے آپ کچھ پیسے بھی کما سکتے ہیں۔ 

پھر ان میں سے وہ سب کم نکال دو جو اس سے بھی بہت اچھے لگتے ہیں۔ اس کے ساتھ کوئی ایسا کام بھی دیکھوں جس سے کبھی پیسہ آنا بند نہ ہو۔ اور یہ کام ایسا ہونا چاہیے۔ کہ آپ اسے جتنا بھی کرلے کبھی تھکے نہیں۔ جو کہ آپ ساری زندگی کر سکے۔ مطلب آپ ساری زندگی بھی یہ کام کریں تو کبھی تھکے نہیں۔

کیونکہ دینا کی سب سے بڑی کمپنی کے مالک نے کہا تھا۔ اگر دنیا میں کو بڑا کام کرنا ہے تو آپنے کام سے پیار کروں۔
اب اگر ان میں سے آپ نے کوئی کام کرنے کا ارادہ کر لیا ہے ۔ تو پھر اسے لوگوں کو دیکھوں جو آپ کے اس کام میں یا پھر آپ کی اس فیلڈ میں پہلے سے کامیاب ہو چکے ہیں۔

آپ ان لوگوں کی زندگی کے بارے میں پڑھوں۔ ان کی کامیاب زندگی کے بارے ویڈیوز دیکھوں۔ بل گیٹس۔ سٹیو جاب۔ ان سب کی بایوگرافی پڑوھوں۔ چاہے آپ یوٹیوبر بنا چاہتے ہیں یا بلوگر یا پھر کوئی بسنیس۔ اپنے تجربے کی بجائے ان لوگوں کی زنگیوں سے سیکھوں۔
اور اگر ان کو پھڑنے میں آپ کو مزانہیں آتا۔ تو شاید آپ اپنے کام کے لیے دل سے مطمین نہیں ہیں۔ یا پھر یہ کام آپ کو پسند نہیں ہے۔ تو آپ کو یہ سب کرنے میں تب ہی مزہ آئے گا۔ جب آپ نے صرف وہی کام کرنے کا ارادہ کیا ہوگا۔ کہ جن کو کرنے میں آپ کو مزا آتا ہے۔ آپ کو تب مزا آئے گا جب آپ کے سپنے ان لوگوں جیسے ہو گے۔
آپ جیسے جیسے اپنے کام میں اگے بھڑتے جائے گے۔ آپ کو خود پر یقین آتا جائے گا۔
آگر آپ اپنی زندگی کو کامیاب کرنا چاہتے ہو۔ تو زیادہ سے زیادہ اپنی فیلڈ میں انفرمیشن حاصل کروں۔ جیسے جیسے آپ کا اس کام میں علم برھتا جائے گا۔ آپ کو اس بات کا پتا چل جائے گا کہ آپ کے لیے اس فیلڈ میں کیا ضروری ہے اور کیا نہیں۔ تب آپ سمجھ جاؤں گے کہ آپ نے نشانہ کہا لگانا ہے۔

مثال کے طور پرجیسا کہ میں ایک یوٹیوبر بنا چاہتا ہو۔ تومجھے اپنی سکریپٹ بہتر کرنی ہوگی۔ اپنی آواز بہتر کرنی ہوگی۔ اسی طرح آپ کو آپنی ان سکیلز پر کام کرنا پڑے گا جن سے آپ پیسا کمانا چاہتے ہیں۔ تو اس کے لیے آپ کو پریکٹیس کرنی ہوگی۔ پریکٹس ہی ایک انسان کو کامیاب بناتی ہے۔ اس پر بروسلی کہتا تھا کہ میں اسے شخص سے نہیں دڑتا جس نے دس ہزار کؐکس کی ایک بار پریکٹس کی۔ بلکہ میں اس شخص سے دڑتا ہو۔ جو یک کک کی پڑیکٹس دس ہزار بار کرتا ہو۔

تو جب آپ کو آپنے کام کے بارے میں انفرمیشن ہوگی تب ہی آپ کوئی ایکشن لے سکوں گے۔ نہیں تو انفرمیشن کے بغیر اندھیرے میں نشانے لگاؤں گے۔
آپ جو آپنے دماغ سے بولتے ہو کہ میں یہ کام نہیں کر سکتا تو وہ کام آپ کے دماغ میں انٹر ہو جاتا ہے۔ پھر اس سے کوئی ٖفرق نہیں پڑتا کہ یہ کام تھیک ہے یا غلط، دماغ آپ کی بات مان لیتا ہیں۔ اس لیے آپ وہی سوچوں جو کرنا چاہتے ہو۔ صرف پیسہ کمانے طریقے سوچوں۔ صرف کامیابی کے طریقے سوچوں۔ یہ دماغ اس کو مان لے گا۔ بس خود کو بہتر بناتے جاؤں
 

3 comments: