Recent Posts

سچی دوستی ہر کسی کو نہیں ملتی

Friendship Shayari

Friendship Shayari

Friendship Shayari

Friendship Shayari

Friendship Shayari

ﮐﺒﮭﯽ ﺍﭘﻨﮯ ﺩﻭﺳﺖ ﮐﺎ ﺍﻣﺘﺤﺎﻥ ﻣﺖ ﻟﻮ

Friendship Quotes

Friendship Quotes

Friendship Quotes

Friendship Quotes

Friendship Quotes

نام کی دوستی اور کام کی یاری

Friendship Status

Friendship Status

Friendship Status

Friendship Status

Friendship Status

Our Lack of Commitment


آئیں انگلش سیکھیں ۔ قومی دن

آئیں انگلش سیکھیں ۔ اسکول کا وقت

آئیں انگلش سیکھیں ۔ کسی کی تعریف کرنا

آئیں انگلش سیکھیں - مجھے بہت زور سے بھوک لگی ہے

آئیں انگلش سیکھیں ۔ کیسی کے گھر دیر سے جانا

ادب و عزت اور آج کے نوجوان

  

ادب و اخلاق ہمارے معاشرے کی سب سے زیادہ ضروری اور بنیادی چیز ہے۔ جو کہ ہمارے معاشرے کی ترقی کے لیے  بہت زیادہ اہم کردار ادا کرتی ہے۔ ایک انسان جس کے پاس ادب کرنے کی قوت نہیں۔ وہ ساری زندگی کہیں بھی اپنا مقام نہیں بنا سکتا۔


ایک کہاوت مشہور ہے کہ "با ادب با نصیب اور بے ادب بے نصیب" یعنی ادب ایک ایسی چیز ہے جو کسی بھی انسان کو بہت قیمتی بنا سکتی ہے۔ ادب و آداب اور اخلاق۔۔۔۔۔۔ کسی بھی قوم کی ترقی کے لیے بہت زیادہ ضروری ہے۔


اسی لئے اسلام میں بھی ادب و احترام کے معاملے میں بہت زیادہ زور دیا گیا ہے۔

اسلام ایک ایسا مذہب ہے جس میں سب کچھ صاف صاف بتا دیا گیا ہے اسی طرح ادب کے معاملات میں بھی صاف وضاحت کردی گئی ہے۔

آج ہم لوگ والدین، استاد اور پڑوسیوں کا احترام کرنا بھول چکے ہیں۔ ہماری نوجوان نسل کا ان تمام رشتوں کے ساتھ آجکل کا رویہ بہت زیادہ تکلیف دہ ہے


اجکل بوڑھے والدین کے ساتھ جو کچھ بھی کیا جاتا ہے وہ ہم سب جانتے ہیں۔ والدین سے زیادہ اونچی آواز میں بات کرنا اور ان کی بےعزتی کرنا بہت ہی معمولی بات ہے۔ یہاں تک کہ معمولی سے جھگڑوں اور ماں باپ کی ذرا سی ڈانٹ پر والدین کو قتل کردیا جاتا ہے۔


والدین کے علاوہ استاد کا احترام بھی ہمارے اوپر فرض ہے ان کا جتنا بھی احترام کیا جائے وہ کم ہے۔ کیونکہ ہمارے استاد ہمارے روحانی باپ بھی ہیں۔ جوکہ ہماری تربیت کے ساتھ ہمیں زندگی  میں کامیابی کا راستہ بھی دکھاتے ہیں۔ لیکن بدقسمتی کے ساتھ ہمارے ملک میں استاد کی عزت کرنے کی بجائے ان کی بےعزتی کی جاتی ہے۔

ہماری نوجوان نسل کو آج خاص طور پر اپنے استاد کے ساتھ  عزت اور احترام سے پیش آنا چاہیے۔ اس کے ساتھ ساتھ کوئی بھی بزرگ ہوں سب کی عزت اور احترام ہماری نوجوان نسل پر لازم ہے۔

آج ہم لوگ جس خوشی سے محروم ہیں۔ وہ خوشی ہمیں اپنے بزرگوں کی عزت اور احترام کی وجہ سے واپس مل سکتی ہے۔

ہمیں اولڈ ایج ہوم میں بزرگوں کی بہت بڑی تعداد دیکھنے کو ملے گی۔ جبکہ بزرگ  ہر گھر کے لئے باعث برکت اور رحمت ہوتے ہیں۔  

ہمارے نوجوانوں کو ادب و احترام کے علاوہ اپنی بول چال پر بھی خاصی توجہ کی ضرورت ہے۔ انسان کی گفتگو سے ہی انسان کی قابلیت اور شخصیت کا اندازہ لگایا جاتا ہے۔ غیر ضروری اور منفی گفتگو سے انسان کی ذہنی طاقت میں کمی آتی ہے۔ ہم سب لوگ ایک مثبت سوچ اور باوقار رویے کے ساتھ اپنے ملک کو مزید ترقی کی طرف لے جا سکتے ہیں۔ اپنی اردگرد موجود ہر انسان سے پیار کریں اس کی عزت کریں۔ اپنے بزرگوں، والدین اور استاد کی خدمت میں ہی ہم سب کی کامیابی ہے۔ 

وقت کو ضائع کرنا زندگی کو ضائع کرنا ہے

وقت زندگی ہے اور اس کو بہتر طور پر استعمال کرکے ہی اپنی زندگی میں کامیاب ہوسکتے ہیں۔ اس لیے  آج کے دور میں ہمیں اپنے اندر وقت کی اہمیت کا احساس پیدا کرنے کی بہت زیادہ ضرورت ہے۔ 


جو وقت ہمارے لئے قابل استعمال ہے وہ یہی وقت ہے جو ابھی گزر رہا ہے اگر ہم گھڑی کی طرف دیکھیں اور سوچے کہ جس طرح ہر لمحہ تیزی سے گزرتا جا رہا ہے اسی طرح ہماری زندگی آہستہ آہستہ کم ہوتی جارہی ہے

قلت وقت کی شکایت

انسان کی ایک عادت  ہے کہ وہ ہمیشہ قلت وقت کی شکایت کرتا رہتا ہے ایسا اس لئے ہے کہ انسان نے خود کو دنیا میں بہت بری طرح سے الجھا لیا ہیں۔ ہم لوگوں نے خود کو اتنا زیادہ الجھا لیا ہے کہ آخرت کے معاملات کے بارے میں بھی سوچنے کا ٹائم نہیں ہے۔

ہر انسان کے پاس جو زندگی ہے وہ صرف آج کی ہی زندگی ہے کیونکہ  اس کے پاس صرف وہی لمحہ ہے جو وہ گزار رہا ہے۔ اس لیے اپنے دن کو اس طرح تقسیم کرے کہ آپ اپنے دفتر کو بھی وقت دے، اپنے گھر والوں اور اپنے آپ کو بھی۔ اور یہ سب ہم صرف ایک ہی صورت میں کر سکتے ہیں جس کے لیے  ہمیں اپنے اندر وقت کی اہمیت کو پہچاننا ہو گا۔ 

اگر ہم اپنے وقت کا اچھے طریقے سے استعمال کریں گے تو ہم اپنی زندگی کو بھی اچھے طریقے سے گزار پائیں گے

مثال کے طور پر

ہر انسان نے ایک وقت تک اس دنیا میں رہنا ہے اور جو وقت انسان کو دیا گیا ہے وہ برف پگھلنے کی طرح تیزی سے گزرتا جا رہا ہے۔ اور اگر اسے غلط کاموں میں ضائع کیا تو اس انسان کی زندگی بھی ضائع ہوجائے گی۔

دنیا کا وقت دیکھتے ہی دیکھتے تیزی سے گزرتا جا رہا ہے۔ اب یہ ہمارے اوپر ہے کہ ہم نے وقت کا صحیح استعمال کرنا ہے یا غلط کیونکہ وقت کو ضائع کرنا زندگی کو ضائع کرنا ہے اور وقت کا صحیح استعمال کرنا زندگی کا صحیح استعمال کرنا ہے۔

تہذیب سے سلیقہ آتا ہے

شچی محبت وعدوں سے نہیں ملتی

کون لوگ ترقی کرنے والے ہوتے ہیں

درد اب میرا واقف ہو گیا